کم خرچ بالا نشین

کم خرچ بالا نشین 

Child suicide bomber یہ بھارتی بھی بڑے بے وقوف ہیں جو کروڑوں ڈالر خرچ کرنے اور سالوں تک فضول وقت ضائع کرتے رہنے کے بعد مریخ پر پہنچنے کی خوشی منا رہے ہیں جہاں کی سرخ بَھدی اور ناہموار زمین پر نہ تو کسی قسم کی سبزی اگتی ہے نہ اناج نہ پھل ۔ جہاں پینے کو پانی کی ایک بوند اور سانس لینے کو آکسیجن تک میسر نہیں ۔ وہاں تو کوئی خوبصورت ناری بھی نہیں جن سے نین مٹکّا کرکے کچھ دل بہلایا جائے ۔
دوسری طرف ہمارے مجاہد بھا ئیوں کی مثال لیجئے جنہوں نے ایسی ٹیکنالوجی ایجاد کی ہے جس پر صرف کچھ ہزار روپیوں کا خرچہ آتا ہے اور جسکا بٹن دباتے ہی محض سیکنڈوں میں اپنے ساتھ درجنوں دیگر لوگوں کو بھی جنت پہنچایا جا سکتا ہے جو مریخ سے بھی کہں آگے واقع ہے ۔ جہاں حوریں گلدستے تھامے ان کے استقبال کے لئے کھڑی ہوتی ہیں ، جہاں انتہائی خوبصورت باغات ہیں جن میں دودھ اور شہد کے ساتھ ساتھ شرابِ طہور کی نہریں بہتی ہیں اور جہاں محض تصور کرتے ہی انواع و اقسام کے میٹھے اور رسیلے پھل خود بخود انسان کی جھولی میں آگرتے ہیں ۔
اب آپ ہی بتائیے کہ ٹیکنالوجی میں انڈیا آگے ہے یا ہمارے مجاہد ؟

Share This:

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

جملہ حقوق بحق چنگیزی ڈاٹ نیٹ محفوظ ہیں