آنسو

آنسو۔

images (3)
باہر زوروں کی بارش ہورہی تھی جبکہ اندر ہال کھچاکھچ بھرا ہوا تھا جہاں سکول کے ہر دل عزیز ماسٹر صاحب کی یاد میں تعزیتی جلسہ ہو رہا تھا ۔
لاؤڈ اسپیکروں سے مہمان خصوصی کی آواز ابھر رہی تھی ۔
” ماسٹر صاحب بہت نیک اور محنتی انسان تھے ۔ انہوں نے اپنی تمام زندگی تعلیم کے فروغ میں بسر کی ۔ اس لئے میں نے فیصلہ کیا ہے کہ جلد ہی اپنے ذاتی فنڈ سے ان کی قبر کو سنگ مرمر سے پختہ کرواؤں گا ”
ہال تالیوں سے گونجنے لگا ۔
جلسہ ختم ہوا تو سب باہر نکلنے لگے ان میں ماسٹر صاحب کا بیٹا بھی شامل تھا ۔ وہ گھر پہنچا تو اس کا سینہ فخر سے پھولا ہوا تھا ۔ اس نے یہ خوش خبری اپنی ماں کو سنائی تو ماں نے کوئی جواب دینے کے بجائے نظریں اٹھا کے کمرے کی چھت کی طرف دیکھنا شروع کیا جس کے سوراخوں سے ٹپ ٹپ پانی ٹپک رہا تھا ۔

Share This:

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

جملہ حقوق بحق چنگیزی ڈاٹ نیٹ محفوظ ہیں