شگون

شگون

وہ گھر سے تیار ہوکر دفتر جانے کے لئے نکلا تو اس کا موڈ بڑا خوش گوار تھا۔ اس کا رخ بس سٹاپ کی طرف تھا۔ اسے یقین تھا کہ وہ آج بھی ہمیشہ کی طرح وقت پر دفتر پہنچ جائے گا۔ ابھی وہ کچھ قدم دورہی گیا ہوگا جب ایک پتلی گلی سے اچانک ایک موٹی تازی سیاہ رنگ کی بلی نمودار ہوئی۔ وہ اسے دیکھ کر ٹھٹھک گیا۔ بلی بھی اسے دیکھ کر سٹپٹا گئی۔ ایک لمحے کے لیے دونوں کی نظریں ملیں۔ تب اچانک اس کے دماغ میں ایک شک سا پیدا ہوا۔
“اگر اس منحوس بلی نے اس کا راستہ کاٹا تو یہ بہت برا شگون ہوگا۔ ہو سکتا ہے کہ اس کی بس کو کوئی حادثہ پیش آئے۔ اسے دفتر میں ڈانٹ بھی پڑ سکتی ہے”
یہ سوچ کر اس نے فوراً قدم بڑھائے اور اس سے پہلے کہ بلی دوڑ کر اس کا راستہ کاٹتی وہ تیزی سے آگے نکل گیا۔ اس کے ہونٹوں پر ایک فاتحانہ مسکراہٹ تھی۔
موٹی کالی بلی ایک لمحے کے لیے وہی کھڑی رہی پھر وہ تیزی سے مڑی اور واپس اسی رستے پر چل کر غائب ہو گئی جہاں سے آئی تھی۔ وہ کوئی خطرہ مول لینا نہیں چاہ رہی تھی کیونکہ کہ آج ایک منحوس انسان نے اس کا رستہ کاٹا تھا۔ اور یہ کوئی اچھا شگون ہرگز نہیں تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.